بِسمِ اللهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيمِ

Allah, in the name of, the Most Affectionate, the Eternally Merciful

Your Questions & Comments

Don't suppress questions! Questions are good for your intellectual health!!!

آپ کے سوالات و تاثرات

سوالات کو دبائیے نہیں! سوالاتذہنی صحت کی ضمانت ہیں!!!

اردو اور عربی تحریروںکو بہتر دیکھنے کے لئے نسخ اور نستعلیق فانٹ یہاں سے ڈاؤن لوڈ کیجیے

Home

انبیاء کرام علیہم الصلوۃ والسلام کے علاقے

 

Don't hesitate to share your questions and comments. They will be highly appreciated. I'll reply ASAP if I know the answer. Send at mubashirnazir100@gmail.com .

 

Religion & Ethics

Personality Development

Islamic Studies

Quranic Arabic Learning

Adventure & Tourism

Risk Management

Your Questions & Comments

Urdu & Arabic Setup

About the Founder

سوال: السلام وعلیکم

دنیا میں جتنے بھی انبیاء بھیجے گئے، وہ سارے عرب دنیا ہی میں یعنی سعودی عرب، شام، لبنان، مصر، عراق وغیرہ میں بھیجے گئے۔ اس بارے میں آپ کچھ بتائیں گے۔ کیا اس وقت یہی ممالک آباد تھے یا دوسرے ممالک جیسے یورپ، امریکہ، آسٹریلیا، جاپان، چین میں بھی انسان آباد تھے؟ قرآن میں تقریباً 26-27 انبیاء کا ذکر کیا گیا ہے۔ آپ مجھے یہ بتائیں گے کہ وہ عرب کے کن کن ممالک میں پیدا ہوئے تھے؟ کچھ کا تو مجھے پتہ ہے اور کچھ کا نہیں پتہ۔ دنیامیں سب سے زیادہ انبیاء کس سرزمین میں بھیجے گئے تھے؟

عبداللہ، سیالکوٹ، پاکستان

جواب: قرآن مجید میں جن انبیاءعلیہم السلام کا ذکر آیا ہے، وہ انہی علاقوں میں تشریف لائے۔ لیکن اس سے یہ نتیجہ اخذ نہیں کیا جا سکتا کہ دنیا کے باقی علاقوں میں کوئی نبی آیا ہی نہیں۔ عین ممکن ہے کہ ان علاقوں میں بھی نبی آئے ہوں۔ اگر ہندوستانی، چینی، جاپانی، قدیم یورپی اور ریڈ انڈین حضرات کے مذاہب کا مطالعہ کیا جائےتو ان کے ہاں بھی توحید، رسالت اور آخرت کے تصورات کسی نہ کسی شکل میں ملتے ہیں اگرچہ ان کی حالت اب کافی مسخ شدہ ہے۔ اس سے اندازہ ہوتا ہے کہ یہ لوگ بھی بہرحال تاریخ کے کسی دور میں آسمانی ہدایت سے فیض یاب ہوئے تھے۔

انبیاء کے علاقوں سے متعلق سوال سوال تفصیلی جواب کا تقاضا کرتا ہے۔ اس ضمن میں اگر آپ سید ابو الاعلی مودودی کی تفہیم القرآن کا مطالعہ کر لیجیے تو آپ کو ہر نبی کے مقام پر تفصیلی گفتگو مل جائے گی۔ آغاز سورہ اعراف سے کیجیے، اس کے بعد سورہ ہود، یوسف ۔۔۔ کی تفسیر میں دیکھتے چلے جائیے۔ آج کل کے نقشے کے اعتبار سے مختصرا عرض کر دوں کہ سیدنا نوح علیہ الصلوۃ والسلام کا علاقہ جنوبی ترکی اور شمالی عراق پر مشتمل تھا۔ سیدنا ابراہیم کا علاقہ جنوبی عراق، پھر فلسطین اور عرب تھا۔ سیدنا ہودکا عمان، سیدنا صالح کا شمالی سعودی عرب،سیدنا اسماعیل کا مکہ، سیدنا اسحاق و یعقوب کا فلسطین، سیدنا یوسف کا فلسطین و مصر، سیدنا موسی کا مصر و فلسطین، سیدنا داؤو و سلیمان کا فلسطین، سیدنا شعیب کا شمالی سعودی عرب، جبکہ سیدنا زکریا، یحیی اور عیسی کا علاقہ فلسطین تھا۔انبیاء بنی اسرائیل کا علاقہ فسلطین تھا جس میں موجودہ فلسطین، شام، اردن اور لبنان شامل ہیں۔ علیہم الصلوۃ والسلام

اس تفصیل سے یہ معلوم ہوتا ہے کہ زیادہ تر انبیاء سرزمین فلسطین میں ہی بھیجے گئے تھے۔والسلام

محمد مبشر نذیر

(دسمبر 2009)

 

مصنف کی دیگر تحریریں

قرآنی عربی پروگرام/سفرنامہ ترکی/††مسلم دنیا اور ذہنی، فکری اور نفسیاتی غلامی/اسلام میں جسمانی و ذہنی غلامی کے انسداد کی تاریخ ††/تعمیر شخصیت پروگرام/قرآن اور بائبلکے دیس میں/علوم الحدیث: ایک تعارف ††/کتاب الرسالہ: امام شافعی کی اصول فقہ پر پہلی کتاب کا اردو ترجمہ و تلخیص/اسلام اور دور حاضر کی تبدیلیاں ††/ایڈورٹائزنگ کا اخلاقی پہلو سے جائزہ ††/الحاد جدید کے مغربی اور مسلم معاشروں پر اثرات ††/اسلام اور نسلی و قومی امتیاز ††/اپنی شخصیت اور کردار کی تعمیر کیسے کی جائے؟/مایوسی کا علاج کیوں کر ممکن ہے؟/دور جدید میں دعوت دین کا طریق کار ††/اسلام کا خطرہ: محض ایک وہم یا حقیقت/Quranic Concept of Human Life Cycle /Empirical Evidence of Godís Accountability