بِسمِ اللهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيمِ

Allah, in the name of, the Most Affectionate, the Eternally Merciful

Your Questions & Comments

Don't suppress questions! Questions are good for your intellectual health!!!

آپ کے سوالات و تاثرات

سوالات کو دبائیے نہیں! سوالات  ذہنی صحت کی ضمانت ہیں!!!

Search the Website New

اردو اور عربی تحریروں کو ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے نستعلیق فانٹ یہاں سے ڈاؤن لوڈ کیجیے۔

Home

New articles and books are added this website on 1st of each month.

 

آخرت میں غیر مسلموں کے ساتھ اللہ تعالی کیا کرے گا؟

 

Don't hesitate to share your questions and comments. They will be highly appreciated. I'll reply ASAP if I know the answer. Send at mubashirnazir100@gmail.com .

 

Religion & Ethics

Personality Development

Islamic Studies

Quranic Arabic Learning

Adventure & Tourism

Risk Management

Your Questions & Comments

Urdu & Arabic Setup

About the Founder

مبشر بھائی جان

السلام علیکم

میں اپنے خالہ زاد سے ایک ٹاپک پر بات کر رہا تھا کہ میں نے اپنے بھائی جس کا نام فہیم ہے، سے پوچھا کہ "ہم لوگ مسلم گھر میں پیدا ہوئے، اس لیے  ہم مسلم ہیں لیکن جو لوگ غیر مسلم گھر میں پیدا ہوئے ہیں، وہ اسلام کے بارے میں جانتے ہیں اور اسلام کو پسند کرتے ہیں لیکن ظاہر نہیں کرتے کسی ڈر کی وجہ سے اور دوسری کے لوگ وہ ہوتے ہیں جو اسلام کو پسند کرتے ہیں اور اسلام کے بارے میں اچھے تاثرات کھل کر دیتے ہیں لیکن کسی وجہ سے وہ بھی کلمہ نہیں پڑھتے اور جیسا اسلام چاہتا ہے، ویسی زندگی گزارتے ہیں تو وہ کیا جنت میں داخل ہو پائیں گے؟

والسلام

محمد مدثر، انڈیا

جنوری 2011

ڈئیر مدثر بھائی

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

ہمیں کسی کے بارے میں جنت و جہنم کا فیصلہ نہیں کرنا چاہیے۔ یہ بات طے ہے کہ اللہ تعالی روز قیامت عین انصاف فرمائے گا اور کسی پر بھی رتی برابر بھی ظلم نہ ہو گا۔ اللہ تعالی ہر شخص کا حساب کتاب کرتے وقت اس کی نفسیات، ذہنی اور جسمانی مسائل، ماحول، اور دیگر تمام عوامل کو دیکھ کر فیصلہ فرمائے گا۔ جن غیر مسلموں کی آپ بات کر رہے ہیں، ان کے ساتھ بھی ایسا ہو گا اور کسی پر ذرا سا بھی ظلم نہ ہوگا۔ اللہ تعالی کے ساتھ جو بھی مخلص ہو گا، اسے اس کے خلوص کا پورا اجر ملے گا اور اس کے معاملے میں کوئی کمی نہ کی جائے گی۔ میں نے اس موضوع پر ایک تحریر لکھی تھی:

http://www.mubashirnazir.org/PD/English/PE01-1003-Meezan.htm

ہمیں تفصیل سے کسی شخص کی عاقبت کی فکر کی بجائے اپنی فکر کرنی چاہیے اور اس بات پر ایمان رکھنا چاہیے کہ اللہ تعالی کسی پر ذرہ برابر بھی ظلم نہ کرے گا اور اسے اس کے حالات و نفسیات کے مطابق جزا و سزا ملے گی۔

کوئی اور سوال ذہن میں پیدا ہو تو بلا تکلف میل کیجیے۔

والسلام

مبشر

ڈئیر مبشر بھائی جان

السلام علیکم

آپ کا میل پڑھنے کے بعد میرا خالہ زاد بھائی آپ سے پوچھنا چاہتا ہے کہ اعمال کی قبولیت کے لیے ایمان کا ہونا شرط ہے اور آپ کہتے ہیں کہ اللہ تعالی انسان کا ضمیر دیکھ کر فیصلہ کریں گے۔ پلیز قرآن سے ریفرنس دے کر کلیئر کر دیں۔

مدثر

ڈئیر مدثر بھائی

 السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

 مجھے آپ کے خالہ زاد بھائی کی بات سے مکمل اتفاق ہے کہ اعمال کی قبولیت کے لیے ایمان کا ہونا ضروری ہے اور یہ بات بھی درست ہے کہ اللہ تعالی ضمیر کے مطابق فیصلہ فرمائیں گے۔

 رہا غیر مسلموں کا معاملہ تو ان کا جرم یہ ہے کہ وہ اللہ تعالی کے آخری رسول صلی اللہ علیہ وسلم کا کسی نہ کسی انداز میں انکار کرتے ہیں۔ ان کے ہاں مختلف قسم کے لوگ پائے جاتے ہیں:

 ۱۔ وہ لوگ جو حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کو سچا پیغمبر مانتے ہیں مگر کسی نہ کسی بہانے سے آپ کی پیروی اختیار نہیں کرتے۔ جیسے بہت سے عیسائیوں کا موقف یہ ہے کہ آپ سچے رسول ہیں مگر آپ کی رسالت صرف عربوں کے لیے ہے۔

 ۲۔ وہ لوگ جو سخت مذہبی تعصب میں مبتلا ہیں اور اس وجہ سے آپ کی نبوت کا انکار کرتے ہیں۔ یہ لوگ اسلام دشمنی پر اتر آتے ہیں۔

 ۳۔ وہ لوگ جنہوں نے کبھی اس بات کی زحمت ہی نہیں کی کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے دعوی نبوت کے بارے میں غور و فکر کریں اور پھر تحقیق کر کے فیصلہ کریں۔

 ۴۔ وہ لوگ اللہ تعالی کے وجود ہی کے منکر ہیں۔

 ان سب گروہوں کے بارے میں تو یہ واضح ہے کہ وہ انکار خدا اور انکار رسالت کے جرم کے مرتکب ہیں اور اس کے لیے انہیں اللہ تعالی کے ہاں جوابدہ ہونا پڑے گا۔

 اس کے علاوہ غیر مسلموں میں مزید یہ گروہ پائے جاتے ہیں:

 ۱۔ وہ غیر مسلم جنہوں نے تلاش حق کی کوشش کی مگر رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی حقانیت ان پر واضح نہ ہو سکی۔

 ۲۔ وہ غیر مسلم جن تک اسلام کی دعوت پہنچ ہی نہ سکی۔ جیسے دور دراز علاقوں کے قبائلی لوگ۔

 ۳۔ وہ غیر مسلم جن تک اسلام کی دعوت پہنچی تو سہی مگر مسخ شدہ شکل میں۔ پھر ان کے مذہبی راہنماؤں نے یا خود مسلمانوں کے کردار نے اسلام کا ایسا برا امیج تخلیق کر دیا جس سے ان پر حق مشتبہ ہو گیا۔ مغرب و مشرق کے بہت سے غیر مسلم شاید اسی قسم سے تعلق رکھتے ہیں۔

 ان گروہوں کے بارے میں یہ کہا جا سکتا ہے کہ اللہ تعالی کی رحمت سے امید ہے کہ وہ ان کی مجبوری کو دیکھ کر ایسا فیصلہ فرمائے گا جو کہ عین انصاف ہو گا۔ قرآن مجید میں ہے: لا يُكَلِّفُ اللَّهُ نَفْساً إِلاَّ وُسْعَهَا لَهَا مَا كَسَبَتْ وَعَلَيْهَا مَا اكْتَسَبَتْ، " اللہ تعالی کسی جان پر اس کی استطاعت سے زیادہ بوجھ نہیں لادتا، اس کے لیے وہی ہے جو اس نے کمایا اور اس پر اسی کی ذمہ داری ہے جو اس نے کیا۔"  

اس سے معلوم ہوتا ہے کہ اللہ تعالی ان کا فیصلہ کرتے وقت یہ لازما دیکھے گا کہ ان تک رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی دعوت کس درجے اور کس شکل میں پہنچی ہے؟ کیا انہوں نے اس دعوت کی حقانیت کو پرکھنے کی کوشش کی؟ کیا انہوں نے سنجیدگی سے اس میں غور کیا؟ اللہ تعالی کے دیگر پیغمبروں کےساتھ ان کا معاملہ کیا تھا؟ وہ کس درجے میں توحید سے وابستہ تھے؟ ان کی اخلاقی کیفیت کیا تھی؟

یہ سب امور "وسعھا" کے مفہوم کے اندر شامل ہیں۔ بات کو سمجھنے کے لیے کچھ دور کے لیے فرض کیجیے کہ آپ انڈیا کے کسی مسلم گھرانے کی بجائے مثلاً ناروے کے کسی گاؤں میں کسی عیسائی گھرانے میں پیدا ہوتے یا پھر منگولیا کے کسی دور دراز گاؤں کے کسی بدھ خاندان میں پیدا ہوتے یا یوگنڈا کے کسی دور دراز علاقے میں ہوتے جہاں کا مذہب شرک ہوتا۔ تصور کیجیے کہ اسلام کی دعوت آپ تک مسخ شدہ شکل میں پہنچتی۔ آپ اللہ تعالی (یا اس کا جو بھی نام آپ کی زبان میں ہوتا) کے ساتھ مخلص ہوتے اور حق کی تلاش میں رہتے مگر حق واضح نہ ہو سکتا۔ اس صورت میں پوری دیانت داری سے فیصلہ کیجیے کہ آپ اپنے لیے اللہ تعالی سے کیا توقع کر سکتے ہیں؟ جو توقع آپ اپنے لیے کرتے ہیں، وہی ان لوگوں کے لیے کیجیے۔

 امید ہے کہ اس سے بات واضح ہو جائے گی۔

 والسلام

مبشر

مصنف کی دیگر تحریریں

Quranic Arabic Program / Quranic Studies Program / علوم القرآن پروگرام / قرآنی عربی پروگرام  /  سفرنامہ ترکی  /    مسلم دنیا اور ذہنی، فکری اور نفسیاتی غلامی  /  اسلام میں جسمانی و ذہنی غلامی کے انسداد کی تاریخ   /  تعمیر شخصیت پروگرام  /  قرآن  اور بائبل  کے دیس میں  /  علوم الحدیث: ایک تعارف   /  کتاب الرسالہ: امام شافعی کی اصول فقہ پر پہلی کتاب کا اردو ترجمہ و تلخیص  /  اسلام اور دور حاضر کی تبدیلیاں   /  ایڈورٹائزنگ کا اخلاقی پہلو سے جائزہ    /  الحاد جدید کے مغربی اور مسلم معاشروں پر اثرات   /  اسلام اور نسلی و قومی امتیاز   /  اپنی شخصیت اور کردار کی تعمیر کیسے کی جائے؟  /  مایوسی کا علاج کیوں کر ممکن ہے؟  /  دور جدید میں دعوت دین کا طریق کار   /  اسلام کا خطرہ: محض ایک وہم یا حقیقت    /  Quranic Concept of Human Life Cycle  /  Empirical Evidence of God’s Accountability

 

Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: page hit counter