بِسمِ اللهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيمِ

Allah, in the name of, the Most Affectionate, the Eternally Merciful

Your Questions & Comments

Don't suppress questions! Questions are good for your intellectual health!!!

آپ کے سوالات و تاثرات

سوالات کو دبائیے نہیں! سوالات  ذہنی صحت کی ضمانت ہیں!!!

Search the Website New

اردو اور عربی تحریروں کو ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے نستعلیق فانٹ یہاں سے ڈاؤن لوڈ کیجیے۔

Home

New articles and books are added this website on 1st of each month.

 

کیا شریعت کے احکام انسان پر بوجھ ہیں؟

 

Don't hesitate to share your questions and comments. They will be highly appreciated. I'll reply ASAP if I know the answer. Send at mubashirnazir100@gmail.com .

 

Religion & Ethics

Personality Development

Islamic Studies

Quranic Arabic Learning

Adventure & Tourism

Risk Management

Your Questions & Comments

Urdu & Arabic Setup

About the Founder

السلام و علیکم

ایک ملحد مفکر نے اپنی ویب سائٹ پر یہ تبصرہ کیا ہے۔ آپ کی اس ضمن میں کیا رائے ہے؟

’’ کیا یہ درست نہیں ہے کہ خدا کے نام پر کچھ لوگوں نے دوسروں پر اپنی اجاراداری قائم کرنے کے لیے ان مذاہب /ادیان کو خود ہی تشکیل دے دیا ہے؟ ورنہ خدا کو ان بے فائدہ اعمال سے کیا حاصل جن پر مذہب کے ٹھیکیدار دوسروں کو عمل کرنے پر مجبور کرتے ہیں؟ اور انکار کی صورت میں مرتد و کافر ٹہرا کر خدا کے دشمن اور واجب القتل قرار دے جاتے ہیں ، آخر خدا کو کیا حاصل ہوگا اپنے مقابلہ میں ایک نہایت کمزور مخلوق کو دنیا میں اسکی خوشیوں سے اور بالآخر اسکی زندگی ہی سے اسے محروم کر کے اور آخرت میں مسلسل و دائمی سزا دے کر؟‘‘

عبد الروؤف

دبئی

فروری 2012

وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

اللہ تعالی کی شریعت بہت ہی مختصر اور سادہ ہے جبکہ مذہبی راہنماؤں کے جاری کردہ احکام نہایت ہی تفصیلی اور مشکل ہوتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ اللہ تعالی نے انہیں قرآن مجید میں ’’اصر‘‘ اور ’’اغلال‘‘ سے تعبیر کیا ہے یعنی ہتھکڑیاں اور بیڑیاں۔ اس وجہ سے اس کی تحقیق بہت ضروری ہے کہ کونسا حکم اللہ تعالی کا ہے اور کونسا کسی کا اجتہاد۔

جب ہم یہ جائزہ لیں گے کہ شریعت کے نام پر ہمارے سامنے جو کچھ پیش کیا جا رہا ہے، وہ واقعی اللہ تعالی اور اس کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی جانب سے ہے تو ہمیں معلوم ہو گا کہ اللہ تعالی کی شریعت میں ایسا کوئی ایسا حکم نہیں ہے جو انسان کو تکلیف اور مشکل میں ڈالے۔ باقی مذہبی اجارہ داروں کی باتوں کی کوئی اہمیت نہیں ہے۔

ایک مثال سے واضح کرتا ہوں۔ نماز اللہ تعالی کی شریعت ہے اور اس کا طریقہ بھی نہایت ہی سادہ ہے۔ اب اسے اس درجے میں ritualize کر دیا گیا ہے کہ پاؤں کی انگلیوں تک کے لیے طے شدہ پروسیجرز مقرر کر دیے گئے ہیں۔  سجدے میں دس کی دس انگلیاں  مڑ کر زمین پر لگنا ضروری ہیں۔ نماز میں دونوں ہاتھوں کی معمولی جنبش سے نماز ٹوٹ جاتی ہے۔  وغیرہ وغیرہ۔  میں نے جب ان تمام پروسیجرز  پر عمل کرنے کی کوشش کی لیکن مسئلہ یہ ہوا کہ میرے محلے کی ہر مسجد کے امام صاحب کسی نہ کسی حکم کی خلاف ورزی کرتے تھے اور ان میں سے ہر ایک پر "مکروہ تحریمی واجب الاعادہ" کا فتوی موجود تھا۔ دوسری جانب جماعت کی نماز بھی واجب تھی۔ چنانچہ میں روزانہ دس نمازیں پڑھنے لگا۔ پانچ جماعت کے ساتھ اور پھر گھر واپس آ کر انہیں دوھرانا۔

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی نماز، اس کے برعکس بہت ہی lively and organic ہوا کرتی تھی۔ اس میں حسب ضرورت دعاؤں اور اللہ تعالی سے مکالمات کا اضافہ بھی ہو جاتا تھا۔ ضرورت کے مطابق نفلی نمازوں کی رکعتیں کم و بیش ہو جاتی تھیں۔ صحیح بخاری و مسلم میں تہجد کے ابواب دیکھ لیجیے۔

بعد میں جب فقہ پر تحقیق کی تو معلوم ہوا کہ ابتدائی مسلمانوں کے ہاں ، ہر چیز میں اتنی sophistication نہیں تھی۔ یہ متاخرین کے ہاں پیدا ہوئی ہے۔ ابتدائی مسلمانوں کے ہاں یہ سختی نہ تھی۔ بلکہ امام ابو حنیفہ رحمہ اللہ تو اس بات کے قائل ہیں کہ جب تک کسی کو عربی نہ آئے، وہ اپنی مادری زبان میں نماز پڑھ سکتا ہے۔

ملحدین کا مسئلہ یہ ہے کہ وہ ان جزوی تفصیلات کو دیکھتے ہیں اور یہ کہتے ہیں کہ خدا کو کیا ضرورت تھی کہ وہ اتنی چھوٹی چھوٹی سی باتوں پر عذاب دے۔ وہ یہ نہیں دیکھتے کہ اللہ تعالی کا حکم کیا ہے اور علماء کی اجتہادی آراء کیا ہیں؟  ملحدین میں چونکہ اللہ تعالی سے محبت کا کوئی تصور موجود نہیں ہے، اس وجہ سے انہیں نماز، روزہ جیسی عبادات بھی بوجھ لگتی ہیں۔ حالانکہ اسلام میں یہ چیزیں پابندیاں نہیں ہیں بلکہ اللہ تعالی کی محبت میں انسان خود ان پابندیوں کو اختیار کرتا ہے۔

والسلام

مبشر

مصنف کی دیگر تحریریں

تقابلی مطالعہ پروگرام /Quranic Arabic Program / Quranic Studies Program / علوم القرآن پروگرام / قرآنی عربی پروگرام  /  سفرنامہ ترکی  /    مسلم دنیا اور ذہنی، فکری اور نفسیاتی غلامی  /  اسلام میں جسمانی و ذہنی غلامی کے انسداد کی تاریخ   /  تعمیر شخصیت پروگرام  /  قرآن  اور بائبل  کے دیس میں  /  علوم الحدیث: ایک تعارف   /  کتاب الرسالہ: امام شافعی کی اصول فقہ پر پہلی کتاب کا اردو ترجمہ و تلخیص  /  اسلام اور دور حاضر کی تبدیلیاں   /  ایڈورٹائزنگ کا اخلاقی پہلو سے جائزہ    /  الحاد جدید کے مغربی اور مسلم معاشروں پر اثرات   /  اسلام اور نسلی و قومی امتیاز   /  اپنی شخصیت اور کردار کی تعمیر کیسے کی جائے؟  /  مایوسی کا علاج کیوں کر ممکن ہے؟  /  دور جدید میں دعوت دین کا طریق کار   /  اسلام کا خطرہ: محض ایک وہم یا حقیقت    /  Quranic Concept of Human Life Cycle  /  Empirical Evidence of Man’s Accountability

 

Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: page hit counter