بِسمِ اللهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيمِ

Allah, in the name of, the Most Affectionate, the Eternally Merciful

Your Questions & Comments

Don't suppress questions! Questions are good for your intellectual health!!!

آپ کے سوالات و تاثرات

سوالات کو دبائیے نہیں! سوالات  ذہنی صحت کی ضمانت ہیں!!!

Search the Website New

اردو اور عربی تحریروں کو ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے نستعلیق فانٹ یہاں سے ڈاؤن لوڈ کیجیے۔

Home

New articles and books are added this website on 1st of each month.

 

کیا فرعون کی ممی محفوظ ہے؟

 

Don't hesitate to share your questions and comments. They will be highly appreciated. I'll reply ASAP if I know the answer. Send at mubashirnazir100@gmail.com .

 

Religion & Ethics

Personality Development

Islamic Studies

Quranic Arabic Learning

Adventure & Tourism

Risk Management

Your Questions & Comments

Urdu & Arabic Setup

About the Founder

 

پیارے بھائی فرعون موسی کے بارے میں فرمان الہی ہے کہ:۔

فَالْيَوْمَ نُنَجِّيكَ بِبَدَنِكَ لِتَكُونَ لِمَنْ خَلْفَكَ آيَةً ۚ وَإِنَّ كَثِيرًا مِّنَ النَّاسِ عَنْ آيَاتِنَا لَغَافِلُونَ ۔

’’آج ہم تمہارے اس بدن کو بچا لیں گے تاکہ وہ تمہارے بعد میں آنے والوں کے لیے نشانی بنے۔ بہت سے لوگ ہماری نشانیوں سے غافل ہیں۔‘‘ (یونس 10:92)

سوال یہ ہے کہ ایک چیز کی صحت ہی مشکوک ہے تو اس کو عبرت کیسے قرار دیا جاسکتا ہے، اعنی میرے علم کے مطابق فرعون موسی کے حوالے سے کنفرم نہیں کہ اس کی کونسی ممی ہے۔

دیکھیں رب تعالی کا ہی ارشاد ہے کہ "یہ لاریب کتاب ہے۔" اور اس کے فورا بعد فرمایا کہ " یہ متقین کے لیے ھدایت ہے۔" گویا کسی تاریخی چیز سے نصیحت تب ہے لی جا سکتی ہے جب وہ مشکوک نہ ہے۔

محمد شکیل

لاہور، پاکستان

اپریل 2012

ڈئیر شکیل بھائی

وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

آیت کریمہ کے سیاق و سباق کو دیکھیے تو یہ مسئلہ حل ہو جاتا ہے۔ اصلاً جن لوگوں کے لیے فرعون کو عبرت بنانا مقصود تھا، وہ وہی تھے جو فرعون کے زمانے میں موجود تھے اور اس کے بعد باقی بچ گئے تھے۔ ان کے لیے اللہ تعالی نے اس کی لاش کو محفوظ کر لیا اور حمامات فرعون نامی مقام پر یہ لاش انہیں تیرتی ملی۔ آیت میں خلفک سے یہی مراد ہیں۔ میں نے خود مصر کے سفر میں ’’حمامات فرعون‘‘ کا یہ مقام دیکھا ہے۔ اس لیے اس میں کوئی اشکال نہیں ہے۔تفصیل آپ سفر نامے میں پڑھ سکتے ہیں۔

www.mubashirnazir.org/ER/L0014-00-Safarnama.htm

جہاں تک ہم لوگوں کے لیے عبرت کا تعلق ہے تو ہم اس کے واقعے سے بھی عبرت لیتے ہیں اور بہت سے فراعین کی ممیاں محفوظ ہیں، ان سے بھی عبرت پکڑتے ہیں۔ اصل میں بعض مفسرین نے بڑے جوش سے اس بات کا اطلاق قیامت تک کے لیے کر دیا، جس سے یہ غلط فہمی پیدا ہوئی۔

ویسے اختلاف اس میں نہیں ہے کہ حضرت موسی علیہ السلام والے فرعون کی لاش محفوظ ہے یا نہیں بلکہ اس میں ہے کہ وہ کون سا فرعون تھا۔ بعض لوگ اس کا نام رعمسیس کہتے ہیں اور بعض منفتاح۔ ان دونوں کی ممیاں قاہرہ کے عجائب گھر میں ہیں اور میں نے خود دیکھی ہیں۔ عبرت تو دونوں ہی کو دیکھ کر حاصل کی جا سکتی ہے۔

والسلام

مبشر

مصنف کی دیگر تحریریں

تقابلی مطالعہ پروگرام /Quranic Arabic Program / Quranic Studies Program / علوم القرآن پروگرام / قرآنی عربی پروگرام  /  علم الفقہ پروگرام   /    مذاہب عالم پروگرام   /    مسلم تاریخ پروگرام   /    عہد صحابہ اور جدید ذہن کے شبہات   /     سفرنامہ ترکی  /    مسلم دنیا اور ذہنی، فکری اور نفسیاتی غلامی  /  اسلام میں جسمانی و ذہنی غلامی کے انسداد کی تاریخ   /  تعمیر شخصیت پروگرام  /  قرآن  اور بائبل  کے دیس میں  /  علوم الحدیث: ایک تعارف   /  کتاب الرسالہ: امام شافعی کی اصول فقہ پر پہلی کتاب کا اردو ترجمہ و تلخیص  /  اسلام اور دور حاضر کی تبدیلیاں   /  ایڈورٹائزنگ کا اخلاقی پہلو سے جائزہ    /  الحاد جدید کے مغربی اور مسلم معاشروں پر اثرات   /  اسلام اور نسلی و قومی امتیاز   /  اپنی شخصیت اور کردار کی تعمیر کیسے کی جائے؟  /  مایوسی کا علاج کیوں کر ممکن ہے؟  /  دور جدید میں دعوت دین کا طریق کار   /  اسلام کا خطرہ: محض ایک وہم یا حقیقت    /  Quranic Concept of Human Life Cycle  /  Empirical Evidence of Man’s Accountability

 

Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: page hit counter