بِسمِ اللهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيمِ

Allah, in the name of, the Most Affectionate, the Eternally Merciful

Your Questions & Comments

Don't suppress questions! Questions are good for your intellectual health!!!

آپ کے سوالات و تاثرات

سوالات کو دبائیے نہیں! سوالات  ذہنی صحت کی ضمانت ہیں!!!

Search the Website New

اردو اور عربی تحریروں کو ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے نستعلیق فانٹ یہاں سے ڈاؤن لوڈ کیجیے۔

Home

New articles and books are added this website on 1st of each month.

 

ووٹ کسے دیا جائے؟

 

Don't hesitate to share your questions and comments. They will be highly appreciated. I'll reply ASAP if I know the answer. Send at mubashirnazir100@gmail.com .

 

Religion & Ethics

Personality Development

Islamic Studies

Quranic Arabic Learning

Adventure & Tourism

Risk Management

Your Questions & Comments

Urdu & Arabic Setup

About the Founder

السلام علیکم سر

آپ کے خیال میں ووٹ کسے دینا چاہیے؟ میں ووٹ دینا چاہتی ہوں مگر مجھے سیاست کا زیادہ علم نہیں ہے۔

ایک بہن

کراچی، پاکستان

مئی  2013

وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ بہن

جہاں تک ووٹ کا تعلق ہے تو یہ کہنا میرے لیے مشکل ہے کہ ووٹ کسے دیں؟ اس کی وجہ یہ ہے کہ ہمارے سیاست دانوں اور سیاسی جماعتوں میں کوئی بھی آئیڈیل پر پورا نہیں اترتا ہے اور اس میں مذہبی اور غیر مذہبی سیاستدان ایک ہی صف میں کھڑے نظر آتے ہیں۔ البتہ میں آپ کو وہ معیار (Criteria) بتا سکتا ہوں، جسے ووٹ دیتے وقت ملحوظ خاطر رکھنا چاہیے۔

اس بات کا میں البتہ قائل ہوں کہ ووٹ ضرور دینا چاہیے۔ اگر نیک لوگ ووٹ نہیں دیں گے تو برے لوگ ہی ہم پر ہمیشہ مسلط رہیں گے۔ نیک لوگوں کی سستی ہی کی وجہ سے برے ان پر مسلط ہوتے ہیں۔  ہمار ےہاں اچھے لوگ الیکشن کے دن خاموشی سے گھر میں پڑے رہتے ہیں اور برے لوگ میدان مار جاتے ہیں۔ اس کے بعد یہی اچھے لوگ اگلے کئی سال تک روتے رہتے ہیں کہ حکومت بری ہے۔ ووٹ ایک امانت ہے جس کا مطلب یہ ہے کہ ہم کسی شخص کے حق میں گواہی دے رہے ہیں کہ ہم اسے حکومت کا اہل سمجھتے ہیں۔ اس وجہ سے یاد رکھیے کہ ہمیں اپنے ووٹ کے لیے اللہ تعالی کے حضور جواب دہ ہونا پڑے گا۔

۱۔ سب سے پہلے تو یہ دیکھیے کہ آپ کے حلقے سے جو امیدوار ہیں، ان میں اخلاق اور کردار کے اعتبار سے کون سا امیدوار سب سے بہتر ہے۔ سیاستدانوں میں آئیڈیل ملنا تو مشکل ہے لیکن یہ دیکھ لیجیے کہ کس پر کرپشن کا الزام نہیں ہے؟ کسی کو اگر پہلے کامیابی ملی ہے تو اس نے اپنے حلقے میں ترقیاتی کام کتنے کروائے ہیں؟ عوام کی خدمت میں کون نسبتاً بہتر ثابت ہوا ہے؟

۲۔ اس کے ساتھ ساتھ یہ دیکھیے کہ کون سی سیاسی جماعت دوسروں کی نسبت بہتر ہے؟ ان کے منشور کا مطالعہ کیجیے اور اس کے ساتھ ساتھ سابق تجربہ کو مدنظر رکھیے کہ انہوں نے اس سے پہلے اپنے وعدے کس حد تک پورے کیے ہیں؟ سو فیصد تو شاید کوئی نہ مل سکے لیکن دوسروں کی نسبت جس کا ریکارڈ بہتر ہو، اسی کو ووٹ دیجیے۔

۳۔ ہمارے ہاں ذات، برادری اور لسانیت کو دیکھا جاتا ہے۔ دین میں یہ کوئی معیار نہیں ہے۔ اگر ہماری برادری سے تعلق رکھنے والا شخص کردار کے اعتبار سے اچھا نہیں ہے اور کسی اور برادری کا شخص اچھا ہے، تو پھر ووٹ اسی اچھے شخص کو دینا چاہیے۔ اگر ہم ایسا نہیں کریں گے تو پھر اللہ تعالی کے ہاں ہمیں پرسش کے لیے تیار رہنا چاہیے۔ اللہ تعالی کا ارشاد ہے:

يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُوا كُونُوا قَوَّامِينَ بِالْقِسْطِ شُهَدَاءَ لِلَّهِ وَلَوْ عَلَىٰ أَنْفُسِكُمْ أَوِ الْوَالِدَيْنِ وَالْأَقْرَبِينَ ۚ إِنْ يَكُنْ غَنِيًّا أَوْ فَقِيرًا فَاللَّهُ أَوْلَىٰ بِهِمَا ۖ فَلَا تَتَّبِعُوا الْهَوَىٰ أَنْ تَعْدِلُوا ۚ وَإِنْ تَلْوُوا أَوْ تُعْرِضُوا فَإِنَّ اللَّهَ كَانَ بِمَا تَعْمَلُونَ خَبِيرًا.

اےاہل ایمان! اللہ کے لیے عدل کے ساتھ گواہی دینے کے لیے تیار ہو جائیے، اگرچہ یہ آپ کے اپنے، یا والدین یا رشتے داروں کے خلاف ہی کیوں نہ ہو۔(جس کے خلاف آپ گواہی دے رہے ہیں) وہ خواہ امیر ہو یا غریب، اللہ ان کی نسبت فوقیت رکھتا ہے۔ اپنی خواہشات کی پیروی کرتے ہوئے عدل سے نہ ہٹ جائیے۔ اگر آپ حق کو چھپائیں گےیا منہ موڑیں گے تو پھر یاد رکھیے کہ جو آپ کر رہے ہیں، اللہ اس سے واقف ہے۔ (النسا 4:135)

۴۔ اس بات کو نہ دیکھیے کہ کسی امیدوار کے منتخب ہونے کا چانس ہے یا نہیں۔ اگر ایک شخص اچھے کردار کا ہے تو خواہ اس کے منتخب ہونے کا امکان نہ ہونے کے برابر ہو، ووٹ اسی کو دیجیے۔ اس طرح ہم اللہ تعالی کے سامنے جواب دہی سے بچ جائیں گے۔

۵۔ اگر آپ کے حلقے سے جتنے بھی امیدوار ہیں، وہ سب کے سب کرپٹ اور بدکردار ہیں تو پھر اسے ووٹ دیجیے، جو کرپشن اور بدکرداری میں دوسروں کی نسبت کم ہو۔

۶۔ ایک بڑا مسئلہ یہ ہو سکتا ہے کہ آپ کے حلقے میں کوئی امیدوار اچھا انسان ہو مگر اس کی پارٹی اچھی نہ ہو۔ یا پھر پارٹی دوسروں کی نسبت بہتر ہو لیکن اس نے جس امیدوار کو ٹکٹ دیا ہے، وہ اچھا نہ ہو۔ ایسی صورت میں دو رائے ہو سکتی ہیں۔ ایک رائے یہ ہے کہ پارٹی کو دیکھتے ہوئے ووٹ دینا چاہیے کہ حکومت اسی نے چلانی ہے۔ دوسری رائے یہ ہے کہ امید وار کو دیکھتے ہوئے ووٹ دینا چاہیے کہ آپ کی نمائندگی اس امیدوار نے کرنی ہے۔ اس صورت میں آپ خود سوچیے اور آپ کا دل و دماغ جس رائے پر مطمئن ہو، اس پر عمل کیجیے۔

دعاؤں کی درخواست ہے۔

والسلام

مبشر

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

مبشرنذیر بھائی۔ اتفاق سے آپ کی یہ تحریر نظر سے گزری، اقتباس یہ ہے:

"ایک بڑا مسئلہ یہ ہو سکتا ہے کہ آپ کے حلقے میں کوئی امیدوار اچھا انسان ۔۔۔۔ اس صورت میں آپ خود سوچیے اور آپ کا دل و دماغ جس رائے پر مطمئن ہو، اس پر عمل کیجیے۔"

آپ کے موقف کی وضاحت یوں بھی کی جاسکتی ہے:

۱۔ اگر آزاد امیدوار ہے تو معاملہ صاف ہے،امیدوار کےشخصی خصائل [قائدانہ صلاحتیں: فوری فیصلہ و عمل درآمد،دو ٹوک و واضح موقف ، سماجی مسائل کاادراک اور انکا قابل عمل حل، اپنے علاقہ مکینوں سے رابطہ، باہمی نزاعی مسائل میں ثالثی،وغیرہ] بنیادی کردار اداکریں گے۔پارٹی منشور یا موقف کا کوئی سوال پیدا نہیں ہوگا۔

۲۔نتیجہ یہ کہ اگر ووٹر کے ترجیحی مسائل علاقائی[حلقہ جاتی] نوعیت کے ہیں تو "شخصی خصائل" بنیادی کردار ادا کریں گےاور اگر ووٹر کے ترجیحی مسائل "ملکی یا عالمی سطح" کےہوں تو "پارٹی کا منشور اور موقف" بنیادی کردارادا کرےگا۔

لہذااصل سوال یہ ہے کہ "ووٹر "کیا چاہتا ہے۔جیسا کہ آپ نے بھی فرمایا ہے۔

محمد عمران

کراچی

مصنف کی دیگر تحریریں

تقابلی مطالعہ پروگرام /Quranic Arabic Program / Quranic Studies Program / علوم القرآن پروگرام / قرآنی عربی پروگرام  /  علم الفقہ پروگرام   /    مذاہب عالم پروگرام   /    مسلم تاریخ پروگرام   /    عہد صحابہ اور جدید ذہن کے شبہات   /     سفرنامہ ترکی  /    مسلم دنیا اور ذہنی، فکری اور نفسیاتی غلامی  /  اسلام میں جسمانی و ذہنی غلامی کے انسداد کی تاریخ   /  تعمیر شخصیت پروگرام  /  قرآن  اور بائبل  کے دیس میں  /  علوم الحدیث: ایک تعارف   /  کتاب الرسالہ: امام شافعی کی اصول فقہ پر پہلی کتاب کا اردو ترجمہ و تلخیص  /  اسلام اور دور حاضر کی تبدیلیاں   /  ایڈورٹائزنگ کا اخلاقی پہلو سے جائزہ    /  الحاد جدید کے مغربی اور مسلم معاشروں پر اثرات   /  اسلام اور نسلی و قومی امتیاز   /  اپنی شخصیت اور کردار کی تعمیر کیسے کی جائے؟  /  مایوسی کا علاج کیوں کر ممکن ہے؟  /  دور جدید میں دعوت دین کا طریق کار   /  اسلام کا خطرہ: محض ایک وہم یا حقیقت    /  Quranic Concept of Human Life Cycle  /  Empirical Evidence of Man’s Accountability

 

Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: Description: page hit counter