RTP LIVE Slot Gacor Slot Terbaru Slot Deposit Pulsa Slot Online Slot Hoki Situs Slot Slot Gacor

 

 

شیطان کا انسان سے تعلق

سوال: السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ،  میرا علوم القرآن کے متعلق ایک سوال ہے ،سورۃ ابراھیم کی 22 آیت میں ہے کہ شیطان ہمیں صرف دعوت دے سکتا ہے اور ہم پر کوئی زور زبردستی نہیں کرسکتا۔ سورۃ الاعراف کی  آیت نمبر 27میں ہے کہ شیطان اور اس کا قبیلہ ہمیں وہاں سے دیکھتے ہیں جہاں سے ہم (انسان) انہیں نہیں دیکھتے۔کیا پہلی آیت سے یہ استدلال کرنا کہ جنات انسان پر جسمانی طور پر قابو نہیں پا سکتےیا ہمیں کچھ کا کچھ دکھانا ان کے لئے ممکن نہیں کیونکہ یہ بھی جبر میں ہی آئے گا کہ سامنے کچھ ہے اور وہ دکھا کچھ اور دیں، کیا یہ استدلال کرنا ٹھیک ہوگا؟ مزید یہ کہ اور دوسری آیت سے یہ استدلال ٹھیک ہوگا کہ جنات انسان کہ سامنے نہیں آتے تو جو لوگ جنات کو دیکھنے کا دعوی کرتے ہیں وہ جھوٹ بولتے ہیں؟

 جواب: وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ 

 آپ نے بالکل صحیح استدلال کیا ہے۔ فرض کیجیے کہ اگر جنات اور شیطان کی پارٹی ہمیں زبردستی گناہوں پر لگا سکے تو پھر ہماراکیا جرم ہو گا؟ اللہ تعالی نے واضح کر دیا ہے کہ شیطان صرف آئیڈیا ہی دے سکتا ہے اور  وہ برائیوں پر ہمیں صرف موٹیویٹ کرنے کی کوشش کرتا ہے۔ اس کے علاوہ اس میں کوئی صلاحیت نہیں ہے۔ سورۃ ابراہیم میں  مستقبل میں شیطان کی ڈسکشن ہمیں بتائی گئی ہے کہ اس وقت شیطان بتائے گا کہ  میں تو برائی کی دعوت ہی دیتا تھا اور آپ لوگ لبیک کہہ بیٹھے۔ اس لیے مجھے ملامت نہ کریں بلکہ آپنے آپ کو لعنت دیں۔ 

اس میں بس تھوڑی  سی پاور شیطان پارٹی کے انسانوں کو دی گئی ہے کہ وہ لوگوں پر جبر کر دیتے ہیں،  جیسا کہ آپ دیکھ سکتے ہیں کہ سیاستدانوں اور مذہبی لیڈرز میں ایسے لوگ ہوتے ہیں جو ہمیں گمراہ کر کے جبر بھی کروا لیتے ہیں۔ اس میں ہم ان کے جبر کو سمجھ لیں  اور مجبوراً گناہ کرنا پڑے تو ہم پر کوئی جرم نہیں ہے  ۔ ہاں اگر ہم ان لیڈرز  کےہاتھوں گمراہ ہو کر ان کے مرید بن بیٹھیں ،حالانکہ اللہ تعالی نے ہمیں قرآن اور لاجک دی ہوئی ہے، تب بھی ہم مرید بن بیٹھے تو پھر ہم  مجرم ہو جائیں گے اور سزا کے مستحق ہو جائیں گے۔ 

 جہاں تک جنات کو دیکھنے کے دعوے کرنے کی بات ہے تواکثر ایسا ہی ہے کہ لوگ جھوٹ دعوی کر کے لوگوں کو جادو ٹونا کر دیتے ہیں کیونکہ ان کا مقصد صرف رقم لینی ہوتی ہے۔ اگر سچ مچ کوئی انسان جادو ٹونا کا ماہر ہو تو وہ بھی محض جنات سے کچھ انفارمیشن لے لیتے ہیں اور پھر جنات سے صرف مشورہ یا درخواست ہی کر لیتے ہیں تاکہ وہ جن  ان کے ٹارگٹ انسان  کو گمراہ کرنے کی کوشش کر لیتے ہیں۔ اس سے زیادہ جنات کی کوئی حیثیت نہیں ہے۔ 

2nd Verse – Al-Baqarah – Relationship between God & Humanity, The Message to Israelites & Their History & Personality Development + The Law of God