RTP LIVE Slot Gacor Slot Terbaru Slot Deposit Pulsa Slot Online Slot Hoki Situs Slot Slot Gacor

 

 

مہرِ مثل، قصاص، دیت اور خلع

سوال: مہرِ مثل کسے کہتے ہیں؟

جواب:مہر تو شادی کا گفٹ ہوتا ہے جو شوہر بیگم کو ٹوکن کے طور پر دیتا ہے۔ “مہر مثل” اس مہر کو کہتے ہیں جو ایک ملک میں سٹینڈرڈ مہر طے کر لیا ہو کہ کم از کم یہ تو ضرور دیں۔ قدیم زمانے میں تابعین فقہاء مہر مثل اس بنیاد پر طے کرتے تھے کہ خاتون کا مہر کم از کم اتنا ہونا چاہیے جو ان کی بہنیں، کزن اور ملتی جلتی خواتین کا جتنا مہر ہوتا ہے، تو اتنا ہی اس خاتون کا ہونا چاہیے۔ 

ہر وقت اور ہر ملک میں الگ الگ مہر مثل کو طے کیا گیا ہے۔ مثلاً انڈیا میں اورنگ زیب عالمگیر صاحب نے 32.5 روپے طے کیا تھا جو اس زمانے میں بڑی معقول رقم تھی۔ اب احمق لوگ اسے “مہر شریعت” کہہ کر 32 روپے کہہ دیتے ہیں اور آج کل تو خاتون اور ان کے والدین کبھی اسے قبول نہیں کریں گے۔ 

سوال: قصاص اور دیت میں کیا فرق ہے ؟

جواب: آسان الفاظ  میں  جواب یہ ہے۔ قصاص تو  اس شخص پر سزا ہے جس نے  جان بوجھ کر دوسرے کو قتل کیا ہے۔ اس کے بدلے میں اس قاتل کو  حکومت قتل کرے۔ دیت کو آپ انگلش میں Blood Money کہتے ہیں۔ ایک شخص نے دوسرے شخص کو قتل کیا لیکن اس کی نیت نہیں تھی  بلکہ غلطی سے قتل کر دیا۔ جیسا کہ اکثر ایکسڈنٹ میں ہو جاتا ہے۔  اس کے بدلے میں پھر غلطی کرنے والے کو اس مقتول کی فیملی کو رقم دینی پڑتی ہے۔ 

قرآن مجید میں دونوں کا ذکر موجود ہے۔ دیت کتنی ہو گی تو اس میں فقہاء میں اختلاف ہے کیونکہ ہر ٹائم اور علاقے میں دیت  کی رقم کا تعین  اس ملک کی اس ٹائم پر اکانومی کے لحاظ سے کیا جا سکتا ہے۔ عہد رسالت میں یہ دیت ہوتی تھی کہ  ایک سواونٹ مقتول کی فیملی کو دے دیں۔ روایتی فقہاء سمجھتے ہیں کہ اب بھی وہی دیت ہونی چاہیے۔   اس میں آپ میرے لیکچر میں دیکھ سکتے ہیں۔                                                          خواتین کے حقوق ۔۔۔ وراثت، دیت اور عدالت میں گواہی

FQ34-Inheritance, Ransom & Testimony about Women

سوال:خلع کی صورت میں کونسی طلاق واقع ہوتی ہے؟

جواب: خلع اسے کہتے ہیں کہ بیگم خودطلاق کا مطالبہ کرے۔ اس کے لیے وہ اپنے شوہر سے مطالبہ کریں گی اور شوہر مان گیا اور طلاق دےدی تو وہ نارمل طلاق ہے۔ اگر شوہر نہ مانا اور خاتون عدالت میں چلی گئیں اور جج نے طلاق کروا دی تو پھر وہ بائن طلاق ہو جاتی ہے کہ اب شوہر   کے پاس آپشن نہیں رہتا کہ وہ عدت کے دوران طلاق کو کینسل نہ کر سکے۔ اسے آپ اس النک پر دیکھ لیں۔  اب اگر وہ خاتون آزادی سے مان لے تو پھر دونوں کو نیا نکاح کرنا ہو گا۔ 

علم الفقہ ۔ اردو لیکچرز